کورونا وائرس نے کئ بڑے کاروبار ڈبو دیئے

کورونا وائرس نے دنیا کا کا یا ہی پلٹ دی ہے معیشت کے حساب کتاب کو ہلا کر رک دیاہےبڑے بڑے کاروبار اچانک زمین پر آ گئے ہیںمگر کچھ کاروبار ہے جن کی چاندی ہو گئی ہے۔تیل جن کے لیے جنگیں ہوتی رہی وہ اس قدر وافر مقدارمیں موجود ہےکہ اس کو رکھنے کے لئےنہ زمین پر جگہ ہے نہ سمندر میں قیمت اتنی گری کہ بڑی بڑی کمپنیاں دیوالیہ ہونے کو ہیں۔

مگر سونے کی قیمتیں عروج پر جا رہی ہے
تیل نے 40- قیمت دیکھی تھی اب یہ کہا جا رہا ہے کہ 100- ڈالر پر بھی جا سکتی ہے اور سونا 3000 ڈالر تک جا سکتا ہے۔

یعنی آج اگر آپ کو ایک تولا سونا لاکھ روپے کا ملتا ہے تو آنے والے سالوں میں 108000 کا فی تولا ہو سکتا ہے۔
اس وبا کے دوران بڑے بڑے کاروبار ٹپ ہو گئے ہیں اور کچھ اس قدر اوپر گئے ہیں کہ ان کے اپنے ذہن و گمان میں بھی نہیں تھا۔
کرونا وائرس کی وجہ سے دنیا میں گاڑیوں کا کاروبار ٹپ ہو گیا ہے مگر اسٹریلیا میں
سائیکلیں ٹوائلٹ پیپر کی طرح بک رہے ہیں
کیبل آپریٹرز کو مشکلات کا سامنا ہے۔

مگر Netflix اور Desne جیسے سٹورز پر لوگوں کی آمد ہی آمد ہے۔بڑے بڑے سٹورز بند
ہو چکے ہیں سامان پڑا پڑا expire ہوتا جا رہا ہے.
E-comrace جو پھلے سے ہی دنیا کی ٹاپ کمپنی ہے اس کے شیئرز میں بے پناہ اضافہ ہو رہا ہے تجزیہ کاروں کے مطابق Amezon اس وقت میں تقریبا دس ہزار ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے ہر سیکنڈ میں۔

بینک آف امریکہ کے ماہرین کے مطابق کورونا وائرس نے غیر معمولی طور پر خرید و فروخت کی
ڈیمانڈ آن لائن سروسز پر اس قدر شفٹ کر دی ہے
کہ ڈیمانڈ کو برقرار رکھنے کے لئے گزشتہ روز Amazon نے اعلان کر دیا کہ وہ کو مزید 75000 لوگوں کو ملازمت پر رکھے گا
یعنی کمپنیاں ملازمین کو نکال رہی ہے اور Amazon کو 75000 اور ملازمین کی
ضرورت ہے ۔

حیران کن طور پر جہاں امریکی مارکیٹ بات دیکھنے میں آیا بڑی بڑی مارکیٹ کے شیئرز
گرتے رہے
وہی گزشتہ مہینے میں Amazon کے شیئرز
میں 45 فیصد اضافہ دیکھا گیا امریکہ میں
اور
اس کی قیمت تاریخی ریکارڈ کے ساتھ
2400 ڈالرز پر پہنچ گئی۔

اور اس قیمت کے ساتھ Amazon کی
قیمت 1200 ارب ڈالر لگائی جا رہی ہیں
یعنی ایک ٹریلین ڈالر سے بھی زیادہ یعنی پاکستان کے معیشت کے چار گنا صرف ایک کمپنی۔

امیزون جو ایپل اور مایکروسافت کے بعد
بڑی تیسری بڑی کمپنی کا درجہ رکھتی ہے
اس کی مالک jeff اس کمپی کے 11%
شیئرز کے مالک ہیں
اور ان شیئرز کی مالیت کچھ عرصے تک
132 عرب ڈالرز تک تھی لیکن کورونا وائرس کی بہران نے امیزون شیئرز
کی مالیت جو ان کے پاس ہے
وہ بڑا دیا جس کے بعد Jeff Bezos
کی قیمت تیرا عرب کے ڈالرز کے اضافہ
کے ساتھ 145 بیلن ڈالرز تک پہنچ چکی ہیں۔

یعنی اس وقت وہ دنیا کے دوسرے امیر ترین شخص ہیں جو بل گیٹس ہیں اس سے چالیس عرب ڈالرز کی زیادہ نیٹ ورتھ رکھتے ہیں۔

ماہرین کے مطابق کورونا وائرس کے بہران
میں امیزون ہر طرف سے چاندی ہو رہی ہیں
اور بہران کے دوران ان کے کاروبار میں
سب سے اہم کاربار انہیں کا رہے گا یہ
بھی کہا جا رہا ہے کہ جتنی بھی کمپنیاں ہیں
جو اس بہران کے دوران فائیدہ اٹھا رہی ہے
ان کے مقابلے میں امیزون ایک فاتح کے
طور پر ابھرا ہے اور ماہرین کے مطابق
امیزون کو شیئرز کی قیمت 2800 ڈالرز
تک جا سکتی ہیں۔

Spread the love

اپنا تبصرہ بھیجیں